مسنون مکمل نماز کا طریقہ

complete prayer in arabic with urdu translation

اَللّٰہُ اَكْبَرُ

اللہ سب سے بڑا ہے۔

اَللّٰهُمَّ بَاعِدْ بَـيْنِىْ وَبَيْنَ خَطَايَاىَ كَمَا بَاعَدْتَّ بَيْنَ الْـمَشْرِقِ وَالْـمَغْرِبِ اَللّٰهُمَّ نَـقِّنِىْ مِنْ خَطَاىَ كَمَا يُـنَـقَّى الثَّوْبُ الْاَبْيَضُ  مِنَ الدَّنَسِ. اَللّٰهُمَّ اغْسِلْنِىْ مِنْ خَطَايَاىَ بِالثَّـلْـجِ   وَالْـمَاۗءِ  وَالْبَـرَدِ (تکبیر کہ بعد یہ دعا پڑھنا صحیح سند سے ثابت ہے)

اے اللہ!میرے اور میرے گناہوں کے درمیان دوری کردے جیسے تونے مشرق اور مغرب کے درمیان دوری پیدا فرمائی ہے۔ اے اللہ! مجھے گناہوں سے صاف کردے جس طرح سفید کپڑا میل کچیل سے صاف کیا جاتا ہے۔ اے اللہ! مجھ سے میرے گناہ برف، پانی اور اولوں کے ساتھ دھو دے۔ صحیح البخاري،:744

سُبْحٰنَكَ اللّٰهُمَّ وَبِـحَمْدِكَ وَتَـبَارَكَ اسْمُكَ وَتَـعَالٰي جَدُّكَ وَلَآ اِلٰهَ غَيْـرُكَ(اس دعا کی اسناد میں ضعف ہے البتہ پڑھنا جائز ہے)

اے اللہ! میں تیری حمد کے ساتھ تیری پاکیزگی بیان کرتا ہوں اور تیرا نام بہت بابرکت ہے اور تیری شان بلند ہے اور تیرے سوا کوئی معبود نہیں۔ سنن ابي داودحديث:775

اَعُوْذُ بِاللّٰهِ السَّمِيْعِ الْعَلِيْمِ مِنَ  الشَّيْـطٰنِ  الرَّجِيْمِ مِنْ هَـمْزِهٖ وَنَـفْخِهٖ وَنَـفْثِهٖ.

میں پناہ مانگتا ہوں اللہ کی (جو) سننے والا، جاننے والا ہے، شیطان مردود سے اس کی دیوانگی سے، اس کے کِبر سے اور اس کے شعروں سے۔ صحیح ابن خزیمة حدیث427

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

(شروع) اللہ کے نام سے جو نہایت رحم کرنے والا، بڑا مہربان ہے۔

اَلْـحَمْدُ لِلّٰهِ رَبِّ الْعٰلَمِيْنَ – ۙالرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ-  مٰلِكِ يَوْمِ الدِّيْنِ- اِيَّاكَ نَعْبُدُ وَاِيَّاكَ نَسْتَعِيْنُ-  اِھْدِنَا الصِّرَاطَ الْمُسْتَـقِيْمَ- صِرَاطَ الَّذِيْنَ اَنْعَمْتَ عَلَيْهِمْ- غَيْرِ الْمَغْضُوْبِ عَلَيْهِمْ وَلَا الضَّاۗلِّيْنََ

تمام تعریفیں اللہ ہی کے لیے ہیں جو پالنے والا ہے تمام جہانوں کا۔ نہایت رحم کرنے والا، بڑا مہربان ہے۔ مالک ہے یومِ جزا کا۔ تیری ہی ہم عبادت کرتے ہیں اور تجھ ہی سے ہم مدد چاہتے ہیں۔ دِکھا ہمیں سیدھا رستہ، ان لوگوں کا رستہ جن پر تو نے انعام کیا، ان کی نہیں جن پر غضب کیا گیا اور نہ گمراہوں کی ۔(صحیح البخاري:756 ) 

قُلْ هُوَ اللّٰهُ اَحَدٌ    -ۚ اَللّٰهُ الصَّمَدُ   -ۚلَمْ يَلِدْ  وَلَمْ يُوْلَدْ  -ۙ وَلَمْ يَكُنْ لَّهٗ كُفُوًا اَحَدٌ 

(آپ) کہہ دیجے: وہ اللہ ایک ہے، اللہ بے نیاز ہے، اس کی کوئی اولاد نہیں اور نہ وہ کسی کی اولاد ہے اور نہ اس کا کوئی ہم پلہ ہے۔

اَللّٰہُ اَكْبَرُ

اللہ سب سے بڑا ہے۔ صحیح البخاري، الاذان، باب رفع الیدین فی التکبیرة الاولٰی، حدیث: 735، 736

سُبْحَانَ رَبِّيَ الْعَظِيْمِ

پاک ہے میرا رب عظمت والا۔ مسلم 1814 ، ابن ماجہ 888

سُبْحَانَكَ اللّٰهُمَّ رَبَّنَا وَبِحَمْدِكَ اللّٰهُمَّ اغْفِرْلِيْ

پاک ہے تو اے اللہ! اے ہمارے رب! اپنی تعریف کے ساتھ، اے اللہ! مجھے معاف فرمادے۔ بخاری 794 ، مسلم 1085

سَمِعَ اللّٰهُ لِمَنْ حَمِدَهٗ

اللہ نے سن لی جس نے اس کی تعریف کی۔ صحیح البخاري، الاذان، باب رفع الیدین فی التکبیرة الاولٰی، حدیث: 735، 736 ، بخاری 796 ، مسلم 1067

رَبَّنَا وَلَكَ الْحَمْدُ حَمْدًا كَثِيْرًا طَيِّبًا مُّبَارَكًا فِيْهِ

اے ہمارے رب! تیرے ہی لیے ہر قسم کی تعریف ہے۔ تعریف بہت زیادہ، پاکیزہ جس میں برکت کی گئی ہے۔ صحیح البخاري، الاذان حدیث:799

سجدے میں جاتے ہوئے اَللّٰہُ اَکْبَرُ کہیں۔ (بخاری 738 ، مسلم 862

سُبْحَانَ رَبِّيَ الْاَعْلٰى

پاک ہے میرا رب جو سب سے بلند ہے۔(صحیح مسلم ۱۸۱۴)

سجدے سے اٹھتے ہوئے اَللّٰہُ اَکْبَرُ کہیں۔

رَبِّ اغْفِرْلِيْ، رَبِّ اغْفِرْلِي

اے میرے رب! مجھے معاف کردے۔ اے میرے رب! مجھے معاف کردے۔

اَلتَّحِيَّاتُ لِلّٰهِ وَالصَّلَوٰتُ وَالطَّـيِّـبَاتُ اَلسَّلَامُ عَلَيْكَ اَيُّـهَا الـنَّبِىُّ وَرَحْمَةُ اللّٰهِ وَبَـرَكَاتُهٗ اَلسَّلَامُ عَـلَـيْـنَا وَعَلٰى عِبَادِ اللّٰهِ الصّٰلِحِيْنَ اَشْهَدُ اَنْ  لَّآ اِلٰهَ اِلَّا اللّٰهُ  وَاَشْهَدُ اَنَّ مُـحَمَّدًا عَـبْدُهٗ وَرَسُوْلُهٗ.

(میری) تمام قولی، فعلی اور مالی عبادتیں اللہ ہی کے لیے ہیں، اے نبی! آپ پر سلام ہو اور اللہ کی رحمت اور اس کی برکات ہوں، ہم پر اور اللہ کے (دیگر) نیک بندوں پر بھی سلام ہو، میں گواہی دیتا ہوں کہ اللہ کے سوا کوئی معبود نہیں اور میں گواہی دیتا ہوں کہ محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اس کے بندے اور اس کے رسول ہیں۔

اَللّٰهُمَّ صَلِّ عَلىٰ  مُـحَمَّدٍ وَّ عَليٰٓ  اٰلِ مُـحَمَّدٍ كَمَا صَلَّــيْتَ عَليٰٓ  اِبْـرَاهِيْمَ وَ عَليٰٓ  اٰلِ اِبْـرَاهِيْمَ اِنَّكَ حَمِيْدٌ مَّـجِيْدٌ اَللّٰهُمَّ بَارِكْ عَلىٰ مُـحَمَّدٍ وَّ عَليٰٓ  اٰلِ مُـحَمَّدٍ كَمَا بَارَكْتَ عَليٰٓ  اِبْـرَاهِيْمَ وَ عَليٰٓ اٰلِ  اِبْـرَاهِيْمَ اِنَّكَ حَمِيْدٌ مَّـجِيْدٌ.

اے اللہ! رحمت نازل فرما محمد (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) پر اور آلِ محمد (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) پر جیسے تونے رحمت نازل فرمائی ابراہیم پر اور آلِ ابراہیم پر، یقیناً تو قابلِ تعریف، بڑی شان والا ہے۔  اے اللہ! برکت نازل فرما محمد (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) پر اور آلِ محمد (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) پر جیسے تونے برکت نازل فرمائی ابراہیم پر اور آلِ ابراہیم پر، یقیناً تو قابلِ تعریف، بڑی شان والا ہے۔ صحیح البخاري، احادیث الانبیاء، حدیث: 337

اَللّٰهُمَّ اِنِّيْ ظَلَمْتُ نَـفْسِىْ ظُلْمًا كَثِيْرًا وَّلَا يَغْفِرُ الذُّنُوْبَ اِلَّآ اَنْتَ فَاغْفِرْ لِيْ مَغْفِرَةً مِّنْ عِنْدِ كَ  وَارْحَمْنِيْ  اِنَّكَ اَنْتَ الْـغَـفُوْرُ الرَّحِيْمُ

اے اللہ! بلاشبہ میں نے اپنی جان پر بہت زیادہ ظلم کیا اور تیرے سوا کوئی گناہوں کو معاف نہیں کرسکتا، پس تو اپنی خاص بخشش سے مجھے معاف فرمادے اور مجھ پر رحم فرما، یقیناً تو بہت بخشنے والا، انتہائی مہربان ہے۔

اَلسَّلَامُ عَلَيْکُمْ وَرَحْمَةُ اللّٰهِ

 

سلام ہو تم پر اور رحمت اللہ کی۔